قیام پاکستان کے بعد یہاں سے جاری ہونے والے رسائل میں ‘‘نقوش’’ کی اہمیت اور مقبولیت ہر دور میں دوسروں سے زیادہ رہی ہے۔ اس رسالے کے مدیر محمد طفیل نے اپنی عملی زندگی کا آغاز تو ایک کاتب کی حیثیت سے کیا تھا لیکن۱۹۴۲ء میں احمد ندیم قاسمی کے ساتھ تعارف کے بعد دونوں […]

مزید پڑھیں

مرزا ادیب بطور ڈراما نگار اور ادیب قارئین میں بے حد مقبول رہے۔ لیکن بہت کم لوگ یہ جانتے ہیں کہ وہ ایک اردو جریدے کی ادارت بھی کرتے رہے ہیں۔ یہ جریدہ ماہنامہ “ادب لطیف” ہے جو ۱۹۳۵ء سے لاہور سے شائع ہو رہا ہے۔ مرزا ادیب ستمبر ۱۹۳۵ء سے اگست ۱۹۴۰ء تک اور […]

مزید پڑھیں

ادبی مجلوں کے متعلق عام طور پر یہ خیال کیا جاتا ہے کہ ان میں شاعری، افسانہ اور تخلیقی ادب کی دیگر اصناف شامل ہوں گی۔ یہ ایک حقیقت ہے کہ ہر ادبی جریدے میں تخلیقات کے ساتھ ساتھ تحقیقی و تنقیدی مضامین بھی شامل ہوتے ہیں۔ تحقیقی مضامین کو مجلوں میں سب سے کم […]

مزید پڑھیں

رشید حسن خان اردو کے نام ور محقق، مدون اور نقاد ہیں-تحقیق اور تدوین متن کے شعبے میں اردو کا کوئی محقق رشید حسن خان کا ہمسر نظر نہیں آتا-‘‘فسانۂ عجائب ”، ‘‘باغ و بہار ”، ‘‘مثنوی گلزار نسیم ”، ‘‘سحر البیان ”، ‘‘مثنویاتِ شوق ” ان کے مخصوص اور معیاری اسلوب اور تحقیق و […]

مزید پڑھیں

ادبی رسالہ ‘‘نقوش ’’کا اجرا مارچ ۱۹۴۸ء میں ہوا۔اردو کے جن رسالوں نے اردو ادب کے فروغ، نئے لکھاریوں کی حوصلہ افزائی اور نشو و ارتقا میں بنیادی کردار ادا کیاان میں مخزن، نقوش، فنون، نیادور، ماہِ نواور اوراق وغیرہ کے نام اہم ہیں۔ نقوش کی پیشانی پر درج یہ الفاظ‘‘زندگی آمیز اور زندگی آموز […]

مزید پڑھیں