‘‘رات’’ کا لفظ ناصرؔکے ہاں جس کثرت سے اور جن مختلف معنی میں استعمال ہواہے وہ قابل توجہ ہے۔ناصرؔ کی ذاتی زندگی اور دوست احباب کی معلومات کے حوالے سے بات کی جائے تو ‘‘رات’’ سے ان کی دلچسپی کے کئی پہلو نظر آتے ہیں۔ناصر کاظمی پر احمد عقیل روبی کا لکھا ہو اخاکہ بھی […]

مزید پڑھیں

۴۶۰ ق۔ م میں نفسیات کے جس علم کی ابتدا بقراط نے کی تھی وہ کئی شکلوں میں آج زندگی کے مختلف شعبوں میں نہ صرف نظر آتا ہے بلکہ ان شعبوں کی ضرورت بھی بن گیا ہے۔زندگی کے دوسرے کئی شعبوں کی طرح ادب کے بھی تقریباً تمام شعبوں میں اس کا عمل دخل […]

مزید پڑھیں

احمد عقیل روبی اردو خاکہ نگاری کاایک بہت بڑا نام ہے ان کے خاکوں کے چار مجموعے چھپ چکے ہیں۔۳۲ خاکوں پر مشتمل مجموعہ ‘‘کھرے کھوٹے’’ کے علاوہ باقی کے تین مجموعے‘‘باقر صاحب’’،‘‘مجھے تو حیران کر گیا وہ’’ اور ‘‘علی پور کا مفتی’’ بالترتیب سیّد سجاد باقر رضوی،ناصر کاظمی اور ممتاز مفتی کے طویل خاکے […]

مزید پڑھیں

ادب اپنے سماج کے مسائل کا عکاس ہوتاہے۔ انسان کی محرومیاں، ناکامیاں، ناامیدیاں، ناآسودگیاں اور خوشگوار یادوں کی بازگشت کسی بھی حساس اور عظیم فن کار کے فن میں محسوس اور غیر محسوس دونوں انداز سے جلوہ گر ہوتی نظر آتی ہیں۔ منٹو کے افسانوں میں اس کی اپنی نفسیاتی الجھنیں بڑے واضح انداز سے […]

مزید پڑھیں

ادیب انسانی ذہن کے پیچیدہ گوشوں تک رسائی حاصل کر تاہے۔ انسانی ذہن بہت سی نفسیاتی الجھنوں کا شکار ہوتاہے۔ انسانی ذہن کے الجھنوں اور ان کا حل اس کے تخلیق کردہ فن میں نظر آنا چاہیے۔ ڈاکٹر محمد عباس نے منٹو کے افسانوں اور ان میں موجودکرداروں کی روشنی انسانی ذہن کی مختلف پیچیدگیوں […]

مزید پڑھیں