اہل دہلی اور اہل لکھنؤ خواجہ حیدر علی آتش کو اپنے دبستانوں کا نمائندہ شاعر قرار دیتے ہیں کیوں کہ ان کی شاعری دہلوی اور لکھنوی مزاج کے امتزاج کی آئینہ دار ہے۔ مزید برآں آتش کی شاعری دبستان دہلی اور لکھنؤ کے لیے پُل کا کام دیتی ہے،لیکن یہ بھی ایک حقیقت ہے کہ […]

مزید پڑھیں

لکھنو میں غزل کے بجائے ایسی اصناف کو فروغ ملا جن میں خارجی عناصر کو بخوبی برتا جا سکتا تھا۔ غزل گو شعرانے خارجیت کو غزل کا جزو بھی بنا دیا جس سے غزل اپنے اصل رنگ سے محروم ہو گئی۔ لکھنوی معاشرے میں آزادی اور بناوٹ کے سبب لکھنوی شعرا نے سراپا نگاری کے […]

مزید پڑھیں