اردو اور ہندی میں شروع دن سے ایک لسانی وحدت موجود تھی لیکن یہ وحدت انیسویں اور بیسویں صدی عیسوی کی سیاسی اور تہذیبی کش مکش کی نذر ہو گئی۔ متذکرہ حالات میں لسانی تفریق کا فروغ پانا فطری بھی تھا اور لازم بھی۔ ہندی اردو جھگڑے کا آغاز ۱۸۶۷ء میں اس وقت ہوا جب […]

مزید پڑھیں

تدوین و ترتیب متن، تحقیق و تنقید کا ایک لازمی جزو ہے۔ اردو ادب میں تصنیف و تالیف کے ابتدائی دور میں تدوین متن کے لیے با ضابطہ طریقہ کا رمروج نہ تھا۔ اردو ادب میں کتابوں کی تصنیف و تالیف کا باقاعدہ اورباضابطہ ادارہ ایشیاٹک سوسائٹی (بنگال) کے نام سے ۱۵ جنوری۱۷۸۴ء  کو  وان  […]

مزید پڑھیں

فورٹ ولیم کالج کا قیام ۱۸۰۰ءمیں کلکتہ میں ہوا۔ اس کالج کے قیام کا مقصد ایسٹ انڈیا کمپنی کے ہندوستان میں متعین افسران کو ہندوستانی زبانوں کی تدریس تھا تاکہ کمپنی کے سیاسی اور معاشی مقاصد کے حصول میں وہ بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کر سکیں۔ برطانیہ کی محققہ ایلیسن صفدی کامقالہ بعنوان”The Fictional Fallout […]

مزید پڑھیں

کم و بیش ہر موضوع کے حوالے سے کوئی نہ کوئی ایسا خیال ضرورموجود ہوتا ہے جو مفروضے کی حیثیت حاصل کر لیتا ہے۔ برصغیر پاک و ہند کی تاریخ میں Divide & Ruleکو ایسے ہی مفروضے کی حیثیت حاصل ہے۔ اس مفروضۂ تقسیم کا ایک حصہ لسانی تقسیم بھی تھا۔ اردو ہندی تنازع کو […]

مزید پڑھیں

فورٹ ولیم کالج کی داستانوں میں باغ و بہار کو سب سے زیادہ شہرت حاصل ہوئی۔ مقالہ نگار نے اس داستان کے مابعد الطبیعیاتی عناصر کا جائزہ لیا ہے۔ مقالہ نگار کے مطابق داستان نگار ما بعد الطبیعیات کے بنیادی پہلو الہٰیات کے علاوہ دیگر گوشوں کو بھی سامنے لایا ہے۔ باغ و بہار میں […]

مزید پڑھیں