اردو نثر میں علامت ابتدا ہی سے موجود تھی۔ داستان میں اس کا رجحان زیادہ تھا۔ ناول نگاروں نے بھی علامت کو استعمال کیا۔ اردو افسانے میں ساٹھ کی دہائی سے علامت، تحریر، تمثیل اور استعاراتی تکنیک استعمال کی جانے لگی۔ اردو غزل کے لیے علامت کوئی نئی چیز نہیں تھی تاہم علامتی غزل کا […]

مزید پڑھیں

اس مقالے میں ستر کی دہائی کے ایک افسانہ نگار احمد جاوید کے افسانوی مجموعےچڑیا گھر کا تجزیہ کیا گیا ہے۔ اس مجموعے میں چرند پرند اور کیڑے مکوڑوں کو علامتوں اور تمثیلوں کے روپ میں پیش کیا گیا ہے۔ احمد جاوید نے حیوانات اور حشرات الارض کی حرکات و سکنات کے ذریعے انسانی اخلاقیات، […]

مزید پڑھیں

دیگر اصنافِ ادب کی طرح اردو افسانہ نے بھی ارتقائی دور سے گزرتے ہوئے ترقی کی بہت سی منازل طے کیں۔ بیسویں صدی کے ابتدائی عشروں میں اردو افسانے میں فنی، موضوعی، معنوی لحاظ سے کئی تبدیلیاں رونما ہوئیں۔ سماجی اور تہذیبی تبدیلیاں براہِ راست افسانے پر اثر انداز ہوئیں۔ رومانوی دور کے افسانوں میں […]

مزید پڑھیں

اُردو افسانہ نگاری میں نئی تکنیک نے کلاسیکی افسانوی اسالیب کی صورت تبدیل کر دی ہے۔ محمد ہارون قادر نے بطور نقاد علامتی اور استعاراتی افسانوی اسالیبِ اظہار کی تفہیم میں ایک رجحان ساز کردار ادا کیا ہے۔ اُردو کے جدید افسانہ نگاروں نے معاصر مغربی افسانوی تکنیکوں سے بہت زیادہ اثرات جذب کیے ہیں۔ […]

مزید پڑھیں

اس مضمون میں فکشن کی تعریف کے بعد سرسید دور کو اُردو نثر میں ایک بڑی تبدیلی کے دور کے طور پر لیا گیا ہے۔ اسی دور میں اُردو ناول نے آنکھ کھولی اور پھر بیسویں صدی میں اُردو افسانے کا آغاز ہوا۔ برصغیر کے مخصوص حالات کے تناظر میں فکشن کی دونوں بڑی اصناف […]

مزید پڑھیں