انتظار حسین نے اردو ناول کا تعلق قدیم داستان کی روایت سے قائم کیا ہے جب کہ زندگی کے بارے میں ان کا رویہ اور نقطۂ نظر جدید ہے۔ وہ اپنے رویے کے اعتبار سے جدید اور اسلوب کے لحاظ سے روایتی دکھائی دیتے ہیں۔ انتظار حسین نئی علامتوں، استعاروں، تمناؤں اور لفظ کے نئے […]

مزید پڑھیں

اس مقالے میں انیسویں صدی کے ایک نادرغیر مطبوعہ قلمی نسخے کے منتخب متن کو جدید املا میں پیش کیا گیا ہے۔ یہ قلمی نسخہ عبدالغفور نساخ کے تحریر کردہ شعراے لکھنؤ کے تذکرے پر مشتمل ہے۔ شعرا کا تذکرہ اساتذہ اور ان کے شاگردوں کے اعتبار سے کیا گیا ہے۔ تذکرہ کل بارہ ابواب […]

مزید پڑھیں

غبار خاطر نواب صدر یار جنگ مولانا حبیب الرحمٰن خان شروانی کے نام مولانا ابوالکلام آزاد کے مکاتیب کا مجموعہ ہے۔ اس کا شمار اگرچہ مولانا ابوالکلام آزاد کی اول درجہ کی تصنیفات میں نہیں ہوتا اور علمی اعتبار سے ترجمان القرآن اور تذکرہ کاہم پلہ نہیں لیکن ادبی اعتبار سے غبارخاطر کو جو مقبولیت […]

مزید پڑھیں

محمد عبدالحئی کی تصنیف شمیم سخن (حصہ دوم) اردو تذکروں کی روایت میں خاصی اہم ہے۔ انھوں نے۱۸۷۲ء میں یہ تذکرہ لکھنا شروع کیااور ۱۸۸۱ء میں اسے مکمل کیا۔ ۱۹۳۲ء میں یہ تذکرہ شائع ہوا۔ شمیم سخن اردو زبان میں ہے اور اس میں (دوسرے حصے میں) ایک سو اکیاون شاعرات کے تذکرے موجود ہیں۔ […]

مزید پڑھیں

انتظار حسین کا شمار اردو ادب کے اہم ترین اور نمائندہ فکشن نگاروں میں کیا جاتا ہے۔ انھوں نے بستی اور تذکرہ کے ناموں سے ناول لکھے، جن میں جہاں کئی ذیلی موضوعات ملتے ہیں وہیں پاکستانی معاشرے میں جغرافیائی تبدیلی کے ساتھ ساتھ معاشرے میں ہونے والی تھوڑ پھوڑ اور ہجرت کے سبب ناسٹلجیا […]

مزید پڑھیں