جدیدیت ایک ایسی فلسفیانہ تحریک ہے جو تہذیب، روایات اور تبدیلیوں کے ساتھ مغربی معاشرے میں بڑے پیمانے پر منظرِعام پر آئی۔ جدیدیت جب برصغیر میں آئی تو اس وقت کے دانش وروں، ادیبوں اور نقادوں نے اسے دل سے قبول کیا۔ اس اصطلاح نے مروجہ نظریات کا رُخ بدل دیا جس سے بحث اور […]

مزید پڑھیں

بیسوی صدی کے آغاز میں نقادوں کے ایک گروہ نے ادب کو سماجی، معاشی اور ثقافتی حوالوں سے سراہنا شروع کیا۔ بیسوی صدی کے دانش وروں اور لکھاریوں نے اُردو ادب میں تہذیب و ثقافت کو نمایاں مقام دیا۔ مختلف ادوار میں ادب نے ثقافت کو ادبی دُنیا میں متعارف کروایا۔ اس ثقافتی تفریق نے […]

مزید پڑھیں

سہیل احمد خان معروف نقاد، سکہ بند دانش وَر اور ایک بڑے شاعر تھے۔ اُن کا اصل کام علامتوں کے سرچشموں کا سُراغ لگانا اور اُن کی تفہیم تھا۔ اس کام کے لیے وہ تحقیق و جستجو کا ایک سلسلہ شروع کرتے ہیں اور اِسے لامحدود سفر کا نام دیتے ہیں۔ انھوں نے علم کی […]

مزید پڑھیں

ڈاکٹر عبادت بریلوی ایک اہم نقاد کے طور پر مشہور ہیں۔ اُن کی تنقید کا بنیادی تعلق معاشرتی اور سماجی معاملات سے ہے۔ چونکہ انھوں نے عصری شعور کو ثقافتی، سماجی، تعلیمی اور نظریاتی بصیرت سے سمجھنے کی کوشش کی ہے اس لیے ہم اُن کی تنقید میں عصری شعور اور اس سے جُڑے حقائق […]

مزید پڑھیں

اُردو میں نفسیاتی تنقید کے دبستان کا سب سے اہم نام ڈاکٹر سلیم اختر ہیں۔ اُنھوں نے اپنا پی ایچ۔ ڈی۔ کا تحقیقی مقالہ ‘اُردو میں نفسیاتی تنقید کا دبستان’ کے موضوع پر لکھا اور فرائڈ، یونگ اور ایڈلر سے متاثر ہونے والے مشرقی اور مغربی ناقدین کی تحریروں کا نہایت گہرا مطالعہ کیا۔ ڈاکٹر […]

مزید پڑھیں