4 results found matching the keyword "".

بلوچستان میں اردو ناول کا آغاز ۱۹۱۵ء سے۱۹۲۰ء کے درمیانی عرصے میں ہوا۔ابتدا سے ہی ناول میں اس خطے کی تہذیب، ثقافت اور رہن سہن کو اجاگر کرنے کی کوشش نمایاں رہی۔ تاریخی ناول بھی لکھے گئے۔ خواتین تخلیق کاروں نے بھی ناول لکھے اور گھریلو زندگی کے نشیب و فراز کو موضوع بنایا۔مقالہ نگار […]

مزید پڑھیں

کسی بھی تہذیب کے عوامل وعناصر کا پہچانا جانا اس تہذیب کے فروغ کے لیے اہمیت کا حامل ہے۔ اس بات کے پیش نظر بلوچستان کے تہذیبی عوامل کا نمایاں ہونا بھی اتنا ہی ضروری ہے۔ اردو ناولوں میں بلوچستان کے رسم و رواج آٹے میں نمک کے برابر نظر آتے ہیں۔ چند ہی گنے […]

مزید پڑھیں

“بالِ غالب” محمد حسین عنقا کی تحریر کردہ “دیوانِ غالب” کی غیر مطبوعہ شرح ہے۔ عنقا نے یہ شرح ۱۹۴۸ء تا ۱۹۵۱ء، دوران اِسیری ہری پورجیل میں لکھی۔ دیوانِ غالب کی شرح تحریر کرتے وقت ان کے پیش نظر‘‘ نسخۂ طاہر’’ رہا۔ دیوانِ غالب کی مکمل شرح کا یہ مسو دہ ۳۰۷ صفحات پر مشتمل […]

مزید پڑھیں

سترھویں صدی میں قلات پر خوانین کی حکومت قائم ہوئی۔ بلوچستان کا وسیع علاقہ خوانین قلات کے زیرِنگرانی رہا۔ قلات، خضدار، مستونگ، گندھاوا اور اس کے گرد و نواح کے علاقے تہذیبی، معاشی، علمی اور ادبی حوالے سے اہم رہے۔ خضدار میں ادبی سرگرمیوں کے نقوش خوانین سے پہلے بھی ملتے ہیں۔ رابعہ خضداری کا […]

مزید پڑھیں