5 results found matching the keyword "".

ہر عظیم شاعر کے ہاں کچھ مخصوص استعارے اور کردار ایسے ہوتے ہیں جو وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ اپنی معنویت بدلتے رہتے ہیں اور ان پر روایتی معانی کا اطلاق متعلقہ شاعرکا مقام و مرتبہ گھٹا دیتاہے۔ غالب کا معاملہ بھی ایسا ہی ہے ان کے ہاں ’’قاتل’’ کے استعارے کو روایتی محبوب کا […]

مزید پڑھیں

کوئی بھی فن کار اپنی ثقافت سے بیگانہ رہ کر ادب تخلیق نہیں کر سکتا۔ بلکہ وہ کوئی بھی تحریر لکھتا ہے تو مقامی تہذیب و ثقافت اس کی تحریر میں دبے پاؤں داخل ہوتی ہے۔ ایسا صرف اقدار کی صورت میں ہی نہیں ہوتا بلکہ محاورات اور ضرب الامثال کی سطح پر بھی ہوتاہے […]

مزید پڑھیں

ڈاکٹر یونس بٹ کی تحریر وں میں آج کا انسان عام طور پر جغرافیائی حد بندیوں سے ماورا اور اپنی تہذیبی سچائیوں اور اقدار کے اندر، تمام تر نفسیاتی الجھنوں اور دیگر حسیاتی عوارض کے ساتھ بے حجاب ہوتا دکھائی دیتا ہے۔ گویا موصوف کا مزاح اپنے موضوع کی آفاقیت سے جنم لیتا ہے۔ یوں […]

مزید پڑھیں

کلاسیکی اصنافِ سخن سے لے کر دورِ جدید میں ہونے والی شاعری تک غزل کو ایک کلیدی صنفِ شاعری کی حیثیت حاصل ہے۔ اردو غزل کے ارتقائی سفرمیں خیبر پختون خوا کے شعرا نے بھی بھر پور حصہ لیا اور سیاسی اور ادبی تحریکوں کی روشنی میں اس نے وقت کے ساتھ ساتھ ہر قسم […]

مزید پڑھیں

مرز ا غالب کا عہد سیاسی تبدیلیوں اور اقدار کی شکست و ریخت کا عہد رہاہے۔ غالب کا تخلیقی شعور اور ادبی بصیرت اپنے عہد کی تحریکوں کو نظر انداز نہیں کرتا بلکہ اپنے عہد کو منفرد پیرائے میں منعکس کرتاہے۔ وہ سیاسی بصیرت سے عاری نہیں تھے لیکن وہ حالات کو پرکھنے کا اپنا […]

مزید پڑھیں