مقالہ نگار: حمیدہ، بی بی کھوار لوک گیت: چترالی ثقافتی پس منظر کی روشنی میں

خیابان : مجلہ
NA : جلد
35 : شمارہ
2016 : تاریخ اشاعت
شعبۂ اردو، جامعہ پشاور، پشاور : ناشر
بادشاہ منیر بخاری : مدير
NA : نايب مدير
Visitors have accessed this post 1 times.

چترال پاکستان کے انتہائی شمال مغرب میں واقع ہے۔ اس علاقے کو دردستان، ناگمان، کھوستان اور کھووستان بھی کہا جاتا ہے۔ یہاں کی مثالی زبان کھوار ہے۔ زبان کے علاوہ اس علاقے کی ثقافت بھی اپنی الگ انفرادیت رکھتی ہے جس کے سب سے نمایاں اجزا موسیقی، لوک رقص اور لوک گیت ہیں لیکن یہ لوک گیت اور رقص مادی ضروریات کی پیداوار نہیں بل کہ دلی اور جذباتی ابال کا نتیجہ ہیں جن کے ذریعے مختلف اور رزم و بزم کے مختلف قصے کہانیوں کو بیان کیا جاتا ہے۔ زیرِنظر مقالے میں اسی چترالی ثقافت کے پس منظر میں کھوار زبان کے گیتوں کا تحقیقی و تنقیدی جائزہ لیا گیا ہے۔