مقالہ نگار: گوندل، محمد یار کئی چاند تھے سرآسماں: ایک بازیافت

دریافت : مجلہ
NA : جلد
20 : شمارہ
2018 : تاریخ اشاعت
شعبۂ اردو، نیشنل یونی ورسٹی آف ماڈرن لینگویجز، اسلام آباد : ناشر
روبینہ شہناز/صوبیہ سلیم : مدير
NA : نايب مدير
Visitors have accessed this post 1 times.

اگرچہ کئی چاند تھے سر آسماں میں ناول کے علاوہ شخصیت نگاری، سیرت نگاری، تاریخ نگاری، تذکرہ نگاری، افسانہ نگاری، ہند یورپی تہذیب کا بیانیہ اور سب سے بڑھ کر مرقع نگاری کا اعلیٰ نمونہ نظر آتا ہے لیکن ان سب باتوں کے ساتھ ساتھ یہ ایک بہت بڑا تاریخی ناول بھی ہے جس کے اختتام پر ناول نگار نے کتب بھی درج کی ہوئی ہیں جو اس ناول کی معنویت میں اضافہ کرتی ہیں۔ اس مقالے میں اس ناول کے تاریخی حقائق کی بازیافت کی گئی ہے۔