مقالہ نگار: عارف، نجیبہ/ امینہ، بی بی لغت نویسی: اصول اور مسائل

تحقیق نامہ : مجلہ
NA : جلد
18 : شمارہ
2016 : تاریخ اشاعت
شعبۂ اردو، جی۔سی۔یونی ورسٹی، لاہور : ناشر
محمد ہارون قادر : مدير
NA : نايب مدير
Visitors have accessed this post 11 times.

کسی بھی ترقی یافتہ زبان کی لسانی اور ادبی تاریخ میں لغت نویسی کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ یہ سلسلہ ہر دور اور ہر زمانے میں تحریر ہونے والی ہر زبان میں مروج رہا ہے۔ کسی بھی لغت کواس کے تمام الفاظ، صرفیات، مرکبات، حرکات، محاورات، مشتقات، ضرب الامثال، تعریفات، صوتی اور معنوی تغیرات، تلفظ اور ان کے اختلافات کا ایک قابلِ قدر اور گراں بہا ذخیرہ ہوناچاہیے۔لیکن چوں کہ زندہ زبانیں مسلسل بڑھتے رہنے کے عمل سے گزرتی ہیں اس لیے لغت نویسی میں ان تمام مطالبات کا احاطہ کرنا ممکن نہیں۔ زیرِنظر مضمون میں مفصل طور پر لغت کی  ترتیب، تحریر اور تدوین کے اصول اور مسائل پر روشنی ڈالی گئی ہے اور اس نکتے پر زور دیا گیا ہے کہ اگر لغت نویسی کے ان اصول و ضوابط کو اردو لغات کو مرتب کرتے وقت ملحوظ رکھا جائے تو پیش آنے والے مسائل میں کسی حد تک کمی واقع ہو سکتی ہے۔