مقالہ نگار: صدیقی، سلمٰی فراز کی شاعری کا مزاحمتی رنگ

بازیافت : مجلہ
16 : جلد
NA : شمارہ
2015 : تاریخ اشاعت
شعبۂ اردو، اورینٹل کالج، پنجاب یونی ورسٹی، لاہور : ناشر
محمد کامران : مدير
NA : نايب مدير
Visitors have accessed this post 7 times.

فراز نے عملی زندگی میں جب بھی اور جہاں بھی انسان کو ظلم و زیادتی، ناانصافی اور لوٹ مار کے ہاتھوں مجبور پایا تب انھوں نے ستم رسیدہ انسانوں کی آزادی، حقوق اور حریت کے لیے نعرہ بلند کیا۔ وہ زبان نسل اور علاقائی حدود سے بالاتر ہو کر پوری انسانیت کے درد کو اپنا درد سمجھتے تھے۔ استعماریت، جارحیت اور ظلم کے خلاف موثر مزاحمت نے احمد فراز کو منصور اور سرمد کا ہمراہ بنا دیا۔ اگرچہ فراز امن پسند شاعر تھےلیکن جارحیت کے سامنے ہتھیار ڈالنے کی بجائے وہ اپنے دفاع کی خاطر ڈٹ جانے کو زیادہ اہم خیال کرتے تھے۔ انھیں مغرب کے جانب دارانہ طرزِ عمل سے شدید نفرت تھی۔ انھوں نے انقلابی سوچ کو محض غزل اور نظم تک محدود نہیں رکھا بلکہ نعت، حمد، سلام اور ترانہ کی اصناف کے روایتی مضامین میں بھی انقلابی افکار و نظریات کو پروان چڑھایا۔ یہی ان کی شاعری کا خاصا ہے۔